کورونا وائرس 2019 کا مرض (COVID-19)

اگر آپ بیمار ہیں تو گھر پر ہی موجود رہیں۔ یہ دوسروں کو بیماری سے محفوظ رہنے میں مدد کرتا ہے۔

[ View information about COVID-19 in English ]

COVID-19 اب نیو یارک سٹی اور پورے امریکہ میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔ آپ کو اب COVID-19 کے بارے میں کیا جاننے کی ضرورت ہے (PDF)

نیو یارک کے کئی باشندوں کو سرگرمیاں محدود کر دینی چاہئیں

نیو یارک میں COVID-19 کے نئے کیسوں کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اب اس سطح پر ہے جو ہم اپریل کے بعد اب پہلی بار دیکھ رہے ہیں۔

بنیادی صحت کے عوارض میں مبتلا افراد کے ساتھ ساتھ ایسے افراد جو ان لوگوں کے ساتھ رہتے ہیں یا ان کی نگہداشت کرتے ہیں، ان کو اب زیادہ احتیاط برتنی چاہئے۔

  • عوامی مقامات اور اجتماعات سے پرہیز کریں اور گھر کے اندر اور باہر ہر وقت چہرے پر نقاب پہنیں۔
  • ملازمت، اسکول یا طبی نگہداشت، COVID-19 ٹیسٹنگ یا گروسری اسٹور یا فارمیسی جانے جیسی ضروری سرگرمیوں کے علاوہ کسی اور وجہ سے گھر سے باہر مت نکلیں۔
  • اگر آپ کو بیمار محسوس ہو رہا ہو تو COVID-19 ٹیسٹ یا دیگر ضروری طبی نگہداشت کے علاوہ اپنے گھر سے مت نکلیں۔

اس ایڈوائزری کا اطلاق نیو یارک کے باشندوں کی ایک وسیع رینج پر ہوتا ہے، جیسے 65 سال سے زیادہ عمر کے افراد اور دیگر افراد میں تمباکو نوشی، ٹائپ 2 ذیابیطس اور موٹاپا سمیت صحت کے عوارض میں مبتلا افراد۔ یہ ان لوگوں پر بھی لاگو ہوتا ہے جو ان لوگوں کے ساتھ رہتے ہیں یا ان کی نگہداشت کرتے ہیں۔

ویکسین کے ٹیکے

ویکسین کی شیشی کا آئیکن






پہلی COVID-19 ویکسین کو ہنگامی استعمال کے لئے منظور کیا گیا ہے، لیکن ممکن ہے کہ یہ عام عوام کو 2021 کے وسط تک دستیاب نہ ہو۔

COVID-19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے ویکسینیں اہم ذریعہ ثابت ہوں گی۔

یہ ویکسین زیادہ تر لوگوں کے لئے کام کرے گی، لیکن یہ ہر کسی کے لیے موثر نہیں ہو گی۔ ہمیں ابھی تک یہ معلوم نہیں ہے کہ تحفظ کب تک برقرار رہے گا۔ ہم یہ بھی نہیں جانتے کہ آپ کو کتنی بار دوبارہ ویکسین کے ٹیکے لگوانا ہوں گے۔

ویکسین لگوائے جانے کے بعد بھی آپ کو COVID-19 کی روک تھام کے ان اہم اقدامات (PDF) پر عمل کرنے کی ضرورت ہو گی: بیمار ہیں تو گھر پر رہیں، اپنے ہاتھ دھوئیں، چہرے پر نقاب پہنیں اور دوسروں کے ساتھ فاصلے پر رہیں۔

ویکسین کے ٹیکے کب اور کہاں سے لگوانے چاہیے

COVID-19ویکسین کے ٹیکے شاید 2021 کے وسط تک عام لوگوں کو وسیع پیمانے پر دستیاب نہ ہو سکیں۔

ویکسین کے ٹیکے مراحل میں دستیاب ہوں گے۔ یہ سب سے پہلے ان لوگوں کو پیش کیے جائیں گے جو نگہداشت صحت کے شعبے سے منسلک ہیں اور انہیں COVID-19 ہونے کا زیادہ خطرہ ہے۔ اس میں وہ لوگ شامل ہیں جو COVID-19 کے مریضوں کی نگہداشت کرتے ہیں یا فیسیلٹی میں کسی ایسی جگہ پر کام کرتے ہیں جہاں COVID-19 کے مریضوں کو دیکھا جاتا ہے۔ یہ ویکسین پہلے رسپانس دینے والوں اور نرسنگ ہوم کے رہائشیوں اور عملے کو بھی فراہم کی جائے گی۔

ممکنہ طور پر، ویکسین لگوانے کی اگلی باری درج ذیل گروپوں کی ہو گی:

  • ضروری کارکنان جو عوام کے ساتھ تعامل کرتے ہیں اور جو جسمانی طور پر فاصلہ قائم نہیں رکھ سکتے
  • عمر اور بنیادی صحت کے عارضوں میں مبتلا ہونے کی وجہ سےCOVID-19 سے پیچیدگیوں کے زیادہ خطرے میں مبتلا افراد

جب ویکسین کی وافر مقدار میں خوراکیں دستیاب ہوں گی تو یہ نیو یارک کے تمام باشندوں کے لیے دستیاب کی جائے گی۔

امکان یہی ہے کہ آپ ویکسین کا ٹیکہ ان جگہوں سے لگوا سکیں گے جہاں سے آپ دوسری ویکسینوں کے ٹیکے لگواتے ہیں، جیسے کہ:

  • آپ کا نگہداشت صحت فراہم کنندہ
  • کمیونٹی اور اسپتال کے کلینکس
  • فارمیسیاں
  • فوری نگہداشت کے سنٹرز

شاید کچھ COVID-19 کی ٹیسٹنگ سائٹس اور کمیونٹی پاپ اپ مقامات بھی ویکسین کے ٹیکے فراہم کر پائیں۔

آزمائشی ویکسینیںوں کا ابھی 16 سال سے کم عمر کے بچوں میں مطالعہ نہیں کیا گیا۔ جب تک مزید معلومات دستیاب نہ ہوں وہ اس عمر کے اس گروپ کو دستیاب نہیں ہوں گیں۔

ویکسینوں کی منصفانہ اور مساوی ٹیکہ کاری

محکمہ صحت اس بات کو یقینی بنائے گا کہ ویکسین تک رسائی منصفانہ اور مساوی ہو۔ ہمارے منصوبے پسماندہ کمیونٹیوں کو درپیش صحت سے متعلق عدم مساوات اور عدم مساوات (PDF) کو مدںظر رکھتے ہیں۔ ہم اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ عالمگیر وباء سے شدید متاثر ہونے والی کمیونٹیوں کو ویکسین تک رسائی حاصل ہو۔

تحفظ

FDA ویکسینوں کی منظوری کے عمل کی نگرانی کر رہی ہے ۔ اس نے ویکسین پر کام کرنے والی کمپنیوں کے لئےحفاظت اور افادیت کے رہنما خطوط جاری کیے ہیں۔ جیسا کہ یہ رہنما خطوط واضح کرتے ہیں، تیاری اور آزمائشی مراحل میں COVID-19 ویکسینوں کو ان حفاظتی قواعد پر سختی سے عمل کرنا ہو گا جن پر کسی بھی دوسری ویکسین کو عمل کرنا ہوتا ہے۔

FDA صرف اس صورت میں ہنگامی استعمال کی اجازت دے گی جب وہ یہ سمجھتی ہے کہ کسی ویکسین کے فوائد اس سے منسلک امکانی خطرات سے زیادہ ہوں گے۔

ویکسین دستیاب ہونے کے بعد افسران حفاظتی نگرانی جاری رکھیں گے۔

ضمنی اثرات

COVID-19 ویکسینوں کے جاری ٹرائلز نے ویکسینیشن کے بعد زیادہ تر ہلکی یا اعتدال علامات کی اطلاع دی ہے، ان میں بخار، جسم میں درد اور انجیکشن لگنے کی جگہ پر سوجن شامل ہیں۔ یہ ویکسین آپ کو COVID-19 نہیں دے سکتی۔ نادر کیسوں میں، لوگوں کو ویکسین سے شدید الرجی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ اگر آپ کو ماضی میں دیگر ویکسینوں سے الرجی کا سامنا کرنا پڑا ہے، یا اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ کو COVID-19 ویکسین کے اجزاء سے الرجی ہو سکتی ہے تو ویکسین کا ٹیکہ لگانے سے پہلے اپنے نگہداشت صحت فراہم کنندہ سے بات کریں۔

اسکولوں اور غیر لازمی قرار دیے جانے والے کاروباروں کی بندش

سٹی کے علاقوں کو کیسوں کی بنیاد پر سرخ، نارنجی یا پیلے زونوں کے طور پر تقسیم کیا گیا ہے، اور زون کی ہر قسم پر مختلف پابندیاں ہیں۔

ذیل میں مزید جانیں کہ یہ پابندیاں آپ کے لیے کیا معنی رکھتی ہیں۔

محفوظ طریقے سے اکٹھے ہونا

اندرن خانہ سرگرمیوں سے گریز کریں اور دوستوں اور خاندان کے ایک بنیادی گروپ تک محدود رہیں۔ یہ بنیادی گروپ عالمگیر وباء کے حوالے سے آپ کا ایک "سماجی دائرہ" ہو گا۔ اگر آپ باہر جاتے ہیں تو نیچے دی گئی احتیاطی تدابیر اپنائیں:

ہوئی جہاز کا آئیکن

جب آپ سفر کریں:

  • اس وقت سفر کرنا آپ، آپ کے اہل خانہ اور آپ کی کمیونٹی کے بیمار ہونے اور وائرس کو دوسرے لوگوں تک پھیلانے کے خطرے میں مبتلا کرتا ہے۔ بہترین آپشن یہی ہے کہ سفر نہ کیا جائے اگر آپ اس سے گریز کر سکتے ہیں۔
  • اگر آپ کو سفر کرنے کی ضرورت ہے تو پہلے سے ہی منصوبہ بندی کرنی چاہئے، احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور واپس آنے پر قرنطینہ کے لئے تیار رہیں۔

COVID-19 کے دوران سفر کرنا (PDF)

COVID-19 کے دوران سفر کرنے کے بارے میں فلائیر (PDF)

برف کے فلیک کا آئیکن

جب آپ چھٹیاں منائیں:

  • سفر کرنے، گروپ کی صورت میں اکٹھے ہونے، یا ہالیڈے پارٹی کی میزبانی یا اس میں شرکت کرنے سے گریز کری۔ ذاتی طور پر صرف گھرانے کے افراد کے ساتھ چھٹیاں منائیں۔
  • ورچوئل پارٹیوں، کوکیز بیک کرنے یا بیرون خانہ اکٹھے ہونے والی چھٹیوں کی محفوظ سرگرمیوں سے لطف اندوز ہوں۔

چھٹیوں کے موسم میں محفوظ رہنے کے لیے تجاویز (PDF)


Icona con una protezione per il viso

جب آپ خریداری کریں:

  • اسٹور میں داخل ہوتے وقت، مصنوعات کو چھونے کے بعد اور اسٹور سے نکلنے کے بعد ہینڈ سینیٹائزر استعمال کریں۔
  • صرف انہی مصنوعات کو چھوئیں جو آپ خریدنا چاہتے ہیں اور جب بھی ممکن ہو بغیر کسی چیز کو چھوئے ادائیگی کرنے کے طریقے استعمال کریں۔
  • محطوظ رہتے ہوئے خریداری کرنے کا طریقہ (PDF)

  • اکٹھے ہونے کے بارے میں مزید تجاویز:

    COVID-19 صحت عامہ کی ایمرجنسی کے دوران محفوظ طریقے سے سفر کرنا (PDF)

    محفوظ طریقے سے اکٹھا ہونے کے بارے میں تجاویز (PDF)

    COVID-19 کی عالمگیر وباء کے دوران محفوظ طریقے سے احتجاج کرنے کا طریقہ (PDF)

    کاروبار کے مالکان کو کیا کچھ جاننے کی ضرورت ہے، اس کے لیے COVID-19: کاروباروں کے لیے رہنمائی ملاحظہ کریں۔

    آپ COVID-19 کے پھیلاؤ کو کس طرح روک سکتے ہیں؟

    گھر کا آئیکن

    اگر بیمار ہیں تو گھر پر ہی رہیں
    صرف ضروری طبی نگہداشت یا دیگر ضروری کاموں کے لیے باہر نکلیں۔



    6 فٹ کا فاصلہ دکھاتا آئیکن

    جسمانی فاصلہ رکھیں
    دوسرے لوگوں سے سے کم از کم 6 فٹ کے فاصلے پر رہیں۔


    ہاتھ دھونے کا آئیکن

    اپنے ہاتھوں کو صاف رکھیں
    اپنے ہاتھ صابن اور پانی سے اکثر دھوئیں۔ اگر صابن اور پانی دستیاب نہ ہوں تو ہینڈ سینیٹائزر استعمال کریں۔


    چہرے کے نقاب کا آئیکن

    چہرے پر نقاب پہنیں
    آپ علامات کے بغیر بھی متعدی ہو سکتے ہیں۔ چہرے پر نقاب پہن کر اپنے ارد گرد کے لوگوں کو بچائیں۔


    اگر آپ کو COVID-19 سے شدید بیماری کا زیادہ خطرہ درپیش ہے تو آپ کو جتنا زیادہ ممکن ہو سکے گھر رہنا چاہیے۔


    ٹیسٹنگ

    COVID-19 ٹیسٹنگ کٹ کا آئیکن

    اس سے قطع نظر کہ آیا ان کو علامات درپیش ہیں یا نہیں یا وہ زیادہ خطرے کا سامنا کر رہے ہیں یا نہیں، نیو یارک کے تمام باشندوں کو COVID-19 کے وائرس کا (تشخیصی) ٹیسٹ کروانا چاہیے۔ ٹیسٹ مفت ہیں۔ اپنے قریب ٹیسٹنگ کی سائٹ تلاش کریں۔


    آپ سے ترک وطن کی حیثیت کے بارے میں نہیں پوچھا جائے گا۔ COVID-19 کا ٹیسٹ کروانا یا اس حوالے سے نگہداشت کی خدمات حاصل کرنا عوامی چارج ضابطہ (PDF) کے تحت عوامی فائدہ نہیں ہے۔

    کس کو فوری طور پر ٹیسٹ کروانا چاہیے

    آپ کو جتنی جلد ممکن ہو سکے ٹیسٹ شیڈول کرنا چاہیے اگر آپ:

    • کو COVID-19 کی علامات درپیش ہیں۔
    • کسی ایسے شخص کے ساتھ قریبی رابطے میں رہے تھے جس کو COVID-19 ہے۔
    • کسی ایسے شخص کے ساتھ کم از کم 10 منٹ کے لیے 6 فٹ یا اس سے کم فاصلے میں رہے تھے جس کو COVID-19 ہے۔
    • COVID-19 کی زیادہ منتقلی والے علاقے میں رہتے یا کام کرتے ہیں۔
    • اعلی پیمانے پر COVID-19 رکھنے والی کسی اسٹیٹ سے واپس آئے ہیں۔
    • حال ہی میں 50 یا اس سے زیادہ افراد کے بڑے اندرون خانہ اجتماع میں گئے تھے۔

    اگر ٹیسٹ کا نتیجہ منفی ہے تو اس بارے میں اپنے نگہداشت صحت فراہم کنندہ سے بات کریں کہ آیا اگلے ہفتے آپ کو دوبارہ ٹیسٹ کروانا چاہیے۔

    ٹیسٹ کب کروانا چاہیے

    نگہداشت صحت کے کارکنان، دیگر لازمی کارکنان اور وہ کارکنان جن کو کام کے دوران لوگوں سے شخصی طور پر رابطہ کرنا ہوتا ہے، انہیں مہینے میں ایک بار ٹیسٹ کروانا چاہیے۔

    ایسے افراد جو لازمی کارکن نہیں ہیں ان کو اتنی مدت کے بعد ٹیسٹ کروانے کی ضرورت نہیں ہے۔ اگر آپ گھر سے باہر کام کرتے ہیں یا اگر آپ ایک اجتماعی ترتیب میں رہتے یا کام کرتے ہیں تو آپ کو باقاعدگی سے ٹیسٹ کروانا چاہیے۔

    کسی ایسے شخص سے ملنے سے پہلے آپ کو ٹیسٹ کرانا چاہیے جس کو COVID-19 کی شدید بیماری کا زیادہ خطرہ ہو سکتا ہے۔ اگر آپ کا ٹیسٹ مثبت آتا ہے، علامات درپیش ہیں یا حال ہی میں کسی ایسے شخص سے قریبی رابطے میں رہے تھے جس کو COVID-19 ہے تو اپنا دورہ منسوخ کر دیں۔

    آپ کو علامات شروع ہونے کے بعد سے، یا اگر آپ کو علامات درپیش نہیں تھیں تو ٹیسٹ کی تاریخ سے لے کر، 90 دن تک COVID-19 کا ٹیسٹ دوبارہ نہیں کروانا چاہیے۔ کوئی شخص جو COVID-19 سے صحت یاب ہو چکا ہے، اس کا ٹیسٹ پھر بھی مثبت آنا جاری رہ سکتا ہے چاہے وہ اب متعدی نہیں ہے۔

    اگر آپ COVID-19 سے صحت یاب ہو چکے ہیں اور COVID-19 کی نئی علامات درپیش ہیں تو نگہداشت صحت فراہم کنندہ سے رجوع کریں، خاص طور پر اگر آپ کا کسی ایسے شخص سے قریبی رابطہ رہا تھا جس کو اس وقت COVID-19 ہے۔

    COVID-19 کے لیے نگہداشت کب حاصل کی جائے

    نگہداشت صحت فراہم کنندہ کا اسٹیتھوسکوپ کے ساتھ آئیکن






    اگر آپ بیمار محسوس کرتے ہیں، COVID-19 کی علامات ہیں، یا آپ میں COVID-19 کی تشخیص ہو چکی ہے تو گھر ہی رہیں۔ صرف اس وقت ہی اپنے گھر سے نکلیں جب آپ کو ضروری طبی نگہداشت یا بنیادی ضروریات، جیسے کہ گروسریز اگر انہیں آپ کے لیے کوئی اور نہیں لا سکتا، درکار ہوں۔

    اگر آپ کو مندرجہ ذیل علامات میں سے کوئی بھی علامت درپیش ہے تو یہ طبی ایمرجنسی ہے۔ فوری کسی ایمرجنسی روم میں جائیں یا 911 پر کال کریں۔

    • سانس لینے میں دقت
    • سینے یا پیٹ میں مسلسل درد یا دباؤ
    • نئی الجھن یا جاگتے رہنے میں ناکامی
    • نیلے ہونٹ یا چہرہ
    • بولنے میں دشواری
    • چہرے پر اچانک لقوہ ہو جانا
    • چہرے، بازو یا ٹانگ سن ہو جانا
    • دورے پڑنا
    • کوئی اچانک اور شدید درد
    • بے قابو خون نکلنا
    • شدید یا مستقل قے یا اسہال

    اگر آپ کو نگہداشت صحت فراہم کنندہ کی ضرورت ہے تو NYC ہیلتھ + ہسپٹلز سے 844-692-4692 یا 311 پر رابطہ کریں۔ آپ ترک وطن کی حیثیت یا ادائیگی کرنے کی استطاعت سے قطع نظر نگہداشت حاصل کر سکتے ہیں۔ NYC ہیلتھ + ہاسپٹلز یا کمیونٹی ہیلتھ سینٹرز آپ سے آپکی ترک وطن کی حیثیت کے بارے میں نہیں پوچھیں گے، اور نہ ہی یہ مریض سے متعلق معلومات کسی شخص یا کسی ادارے سے شیئر کرتے ہیں، جب تک کہ مریض انہیں اس بات کا اختیار نہ دے۔

    دیگر طبی نگہداشت کب حاصل کی جائے

    آپ کو درکار طبی نگہداشت حاصل کرنے میں دیر نہ کریں۔ کوئی بھی نئی علامات محسوس کرنے کی صورت میں اپنے فراہم کنندہ سے جلدی سے رابطہ کریں، اس بات سے قطع نظر کہ آیا آپ سمجھتے ہیں کہ یہ COVID-19 سے متعلق ہو سکتی ہیں۔

    آپ کو معمول کے چیک اپ اور اسکریننگ پر بھی جانا چاہیے، اور اپنے اور اپنے بچوں کے لیے شیڈول شدہ ویکسینوں کے ٹیکے لگوانے چاہیئں۔

    علامات اور بیمار ہونے کی صورت میں کیا کرنا چاہیے

    COVID-19 میں مبتلا افراد نے وسیع پیمانے پر علامات کی اطلاع دی ہے، ان میں ہلکی علامات سے لے کر شدید بیماری شامل ہے۔ کچھ لوگوں کو کوئی بھی علامات درپیش نہیں ہوتیں۔

    وائرس کی زد میں آنے کے 2 سے 14 دن بعد علامات ظاہر ہو سکتی ہیں۔ مندرجہ ذیل علامات والے لوگوں کو COVID-19 ہو سکتا ہے:

    • بخار یا سردی لگنا
    • کھانسی
    • سانس پھولنا یا سانس لینے میں دشواری
    • تھکاوٹ
    • پٹھوں یا جسم میں درد
    • سر درد
    • چکھنے یا سونگھنے کی حس میں نئی کمی
    • گلے میں خراش
    • ناک بند ہونا یا بہنا
    • متلی یا الٹی
    • اسہا

    اس فہرست میں تمام ممکنہ علامات مندرج نہیں ہیں۔

    COVID-19 سے متاثرہ زیادہ تر لوگوں کو ہلکی سے لے کر درمیانی علامات درپیش ہوتی ہیں اور وہ خود ہی تندرست ہو جاتے ہیں۔ اگرچہ ایسا کم ہوتا ہے، COVID-19 نمونیا اور اسپتال میں داخل ہونے یا موت کا سبب بننے والی دیگر پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے۔

    اگر آپ کو ہلکی سے لے کر معتدل تک علامات ہیں تو گھر پر رہیں۔ گھر سے باہر مت نکلیں سوائے ضروری طبی نگہداشت حاصل کرنے (بشمول COVID-19 کی ٹیسٹنگ کے لیے) یا بنیادی ضروریات جیسے کہ گروسری حاصل کرنے کے لیے، اگر کوئی اور یہ آپ کے لیے نہیں لا سکتا۔

    اگر آپ کو علامات درپیش ہیں

    • شدید علامات: اگر آپ کو مذکورہ بالا علامات درپیش ہیں تو آپ کو فوری طور پر ایمرجنسی روم جانا یا 911 پر کال کرنی چاہیے۔
    • صحت کے بنیادی عارضوں کے ساتھ ہلکی سے لے کر معتدل علامات: اگر آپ کو علامات درپیش ہیں اور آپ 50 سال سے زیادہ عمر کے ہیں یا بنیادی صحت کے عارضے لاحق ہیں، جیسے کہ پھیپھڑوں کی بیماری، دمہ، دل کی بیماری یا کینسر، تو آپ کو اپنے نگہداشت صحت فراہم کنندہ کو کال کرنا چاہیے۔ اگر آپ کو علامات درپیش ہیں اور تین سے چار دن میں بہتر محسوس نہیں کرتے ہیں تو بھی آپ کو اپنے فراہم کنندہ کو کال کرنا چاہیے۔
    • صحت کے بنیادی عارضوں کے بغیر ہلکی سے لے کر معتدل علامات: جتنا ممکن ہو گھر میں رہیں اور اپنے فراہم کنندہ سے رابطہ مت کریں۔ اپنے گھر میں دوسروں کی حفاظت کے لیے، دیگر افراد سے 6 فٹ دور رہیں اور کثرت سے چھونے والی تمام جگہوں کی صفائی اور جراثیم کشی کریں۔ اپنے ہاتھ اکثر دھوئیں اور فرنیچر، برتن یا دوسری چیزیں اکٹھے استعمال نہ کریں۔
    • اگر آپ کو COVID-19 ہے تو کیا کرنا چاہیے (PDF)

    جب آپ بہتر محسوس کریں

    جب آپ مندرجہ ذیل تمام باتیں واقع ہو جائیں تو آپ ضروری کاموں کے لیے اپنے گھر سے باہر جا سکتے ہیں:

    • آپ کی علامات شروع ہوئے کم از کم سات دن ہو چکے ہیں۔
    • آپ کو کبھی بخار نہیں تھا یا بخار کم کرنے والی ادویات جیسے Tylenol® یا آئبوپروفین کے استعمال کے بغیر آپ کو پچھلے تین دن سے بخار نہیں ہوا۔
    • آپ کی بیماری میں مجموعی طور پر بہتری آئی ہے۔

    وہ لوگ جن کو شدید بیماری کا زیادہ خطرہ ہے

    شدید بیماری کا مطلب یہ ہے کہ COVID-19 میں مبتلا شخص کو اسپتال میں داخل ہونے، سانس لینے میں مدد کے لیے انتہائی نگہداشت یا وینٹیلیٹر کی ضرورت پڑ سکتی ہے، یا اس کی موت بھی واقع ہو سکتی ہے۔ جن لوگوں کو شدید بیماری کا زیادہ خطرہ ہے، ان کو اپنی صحت کی نگرانی کے حوالے سے خاص طور پر محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔

    بڑوں میں COVID-19 سے شدید بیماری کا خطرہ عمر کے ساتھ بڑھتا ہے، جبکہ ضعیف لوگوں کو سب سے زیادہ خطرہ ہوتا ہے۔ مثال کے طور پر، 50 سال سے 60 سال کے درمیان عمر کے لوگوں کو 40 سال سے 50 سال کے درمیان عمر کے لوگوں کی نسبت بیماری کا زیادہ خطرہ ہو گا۔ اسی طرح 60 سال یا 70 سال کے لگ بھگ عمر کے لوگوں کو عمومی طور پر ان لوگوں کی نسبت زیادہ خطرہ ہو گا جن کی عمر 50 سال کے لگ بھگ ہے۔/p>

    اس کے علاوہ، صحت کے مندرجہ ذیل بنیادی عوارض میں مبتلا کسی بھی عمر کے افراد کو COVID-19 سے شدید بیماری کا زیادہ خطرہ ہو گا:

    • سرطان / کینسر
    • گردے کی دائمی بیماری
    • COPD (دائمی رکاوٹی پلمونری بیماری)
    • ٹھوس اعضا کے ٹرانسپلانٹ سے امیونوکم پرومائزڈ کی حالت (کمزور مدافعتی نظام)
    • موٹاپا (30 یا اس سے زیادہ کا باڈی ماس انڈیکس)
    • دل کے عوارض، جیسے دل کا کام کرنا چھوڑ دینا، کورونری آرٹرری کی بیماری یا کارڈیو مایوپیتھی
    • سیکل سیل کی بیماری
    • تمباکو نوشی
    • ٹائپ 2 ذیابیطس میلیٹس

    خطرے کے دیگر عوامل

    ہم COVID-19 کے بارے میں ابھی مزید جان رہے ہیں اور صحت کے دیگر مسائل بھی ہو سکتے ہیں جو شدید بیماری کا خطرہ بڑھا سکتے ہیں۔ ابھی تک ہم جو کچھ جان پائے ہیں، اس کے مطابق صحت کے مندرجہ ذیل عوارض میں مبتلا افراد کو غالبا COVID-19 سے شدید بیماری کا خطرہ ہو سکتا ہے:

    • دمہ (ہلکے سے لے کر شدید دمہ)
    • دماغی خلیوں کی بیماری (دماغ میں خون کی نالیوں اور خون کی فراہمی کو متاثر کرتی ہے)
    • سسٹک فائبروسس
    • ہائپر ٹینشن یا بلند فشار خون
    • خون یا بون میرو کی ٹرانسپلانٹ، قوت مدافعت کی کمی، HIV، کورٹیکوسٹیرائڈز کے استعمال، یا قوت مدافعت کو کمزور کرنے والی دوسری دوائیوں کے استعمال سے امیونوکومپرومائزڈ حالت (کمزور مدافعتی نظام)
    • جگر کی بیماری
    • اعصابی مسائل جیسے ڈیمینشیا
    • جگر کی بیماری
    • حمل
    • پلمونری فبروسس (پھیپھڑوں کے ٹشوز کو نقصان ہونا یا ان پر زخموں کے نشان ہونا)
    • تھیلیسیمیا (خون کی خرابی کی ایک قسم)
    • ٹائپ 1 ذیابیطس میلیٹس

    اس کے علاوہ، وہ بچے جو طبی لحاظ سے پیچیدہ ہیں، جن کو نیورولوجک، جینیاتی یا میٹابولک عوارض درپیش ہیں، یا جن کو پیدائشی طور پر دل کی بیماری لاحق ہے، ان میں دوسرے بچوں کی نسبت COVID-19 کی شدید بیماری کا زیادہ خطرہ ہوتا ہے۔

    ذہنی صحت اور نشہ آور مادے کا استعمال

    COVID-19 کی عالمگیر وباء نیو یارک کے باشندوں میں تناؤ، تھکاوٹ اور بے چینی کا باعث بنی ہے۔ جبکہ آپ اپنی صحت اور کمیونٹی کا تحفظ کرتے ہیں، اپنی ذہنی صحت کا تحفظ کرنا اور اپنے الکحل اور نشہ آور مادے کے استعمال کو بھی ذہن میں رکھنا ضروری ہے۔

    غیر یقینی کے اس جاری دور میں، ہم سب کبھی کبھار بے چین محسوس کر سکتے ہیں۔ آپ کو نبردآزما ہونے میں معاونت فراہم کرنے کے لیے ٹولز اور مدد دستیاب ہیں۔

    روزانہ کی بنیاد پر نبردآزما ہونے کی تجاویز

    • جانیں کہ کہ تناؤ ، صدمہ اور غم اس بات پر اثر انداز ہو سکتے ہیں کہ آپ کیسا محسوس کرتے ہیں:
      • جسمانی: تھکاوٹ، سر درد، دل کی تیز دھڑکن اور پہلے سے درپیش طبی عارضوں کا بگڑ جانا
      • جذباتی: اداسی، مایوسی، اضطراب، غصہ اور چڑچڑے پن کا احساس
      • ذہنی: الجھن، بھول جانا، یا توجہ دینے یا فیصلے کرنے میں دشواری
      • طرز عمل: اپنا آپ محسوس نہ کرنا، بےچینی، استدلال اور کھانے کی عادات، سونے اور نشی آور مادے کے استعمال میں بدلاؤ
    • اپنی زندگی کے ان حصوں پر توجہ دیں جو آپ کے کنٹرول میں ہیں۔ اپنے معمولات پر قائم رہیں، چہرے پر نقاب پہنیں اور جسمانی دوری پر عمل کریں۔
    • اپنے آس پاس کے معاون لوگوں اور کمیونٹیز کے ساتھ جڑے رہیں۔
    • اپنے آپ کو یاد دلائیں کہ آپ کی طاقتیں کیا ہیں اور یہ کہ آپ نے کس طرح دوسرے مسائل کا نظم کیا ہے۔
    • کسی تربیت یافتہ پیشہ ور سے بات کرنے کے لئے جو نگہداشت کے لئے معاونت اور حوالہ جات فراہم کر سکتا ہو، NYC Well یا پراجیکٹ ہوپ سے رابطہ کریں۔

    نیچے دیئے گئے وسائل دباؤ اور صدمے کے اثرات کو کم کرنے میں آپ کی مدد کرسکتے ہیں۔

    COVID-19: دوستوں اور خاندان سے جڑے رہنا (PDF)

    متعدی بیماری کے پھیلاؤ کے دوران تناؤ کا مقابلہ کرنا (PDF)

    کیا یہ اضطرابی کیفیت، گھبراہٹ، یا COVID-19 ہے؟ (PDF)

    پریشان کن واقعات لوگوں کے نشہ آور مادے کے استعمال کے طریقے پر اثر انداز ہو سکتے ہیں۔

    لوگ COVID-19 عالمگیر وباء کے نتیجے میں ہونے والے صدمے، غم ، آمدنی میں کمی یا بوریت کا مقابلہ کرنے کے لئے الکحل اور دیگر نشہ آور مادے کا استعمال کر سکتے ہیں۔ منشیات استعمال کرنے والے افراد میں زیادہ زائد خوراک لینے کا خطرہ بھی ہو سکتا ہے، خاص طور پر وہ لوگ جو ہیروئن یا دیگر افیم نما استعمال کرتے ہیں۔

    علیحدگی یا قرنطینہ کی ترتیبات میں رہتے وقت منشیات اور الکحل کا محفوظ استعمال (PDF)

    COVID-19: منشیات استعمال کرنے والے لوگوں کے لیے رہنمائی (PDF)

    COVID-19 کی عالمگیر وباء کے دوران افیم نما کے استعمال سے منسلک خرابی کا گھر پر کس طرح علاج کیا جائے (PDF)

    امتیازی سلوک اور ہراسگی

    اگر آپ کو اپنی نسل، قومیت یا دیگر شناختوں کی وجہ سے ہراساں کیا جارہا ہے تو 311 پر کال کریں یا آن لائن شکایت درج کریں۔

    اضافی وسائل